جموں میں چار عسکریت پسند گرفتار ، پاکستانی سم کارڈ ضبط

جموں (ثناء نیوز) پنجاب اور جموں پولیس نے عسکریت پسندوں کے نیٹ ورک کو بے نقاب کرنے کا دعوی کیا ہے ۔ پولیس حکام نے دعوی کیا ہے کہ خالستان زندہ باد فورس اور خالصتان لبریشن فورس کی جانب سے ریاست جموں وکشمیر میں بڑے پیمانے پر حملوں کی منصوری بندی کی جا رہی تھی تاہم پولیس نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے 4 عسکریت پسندوں کی گرفتاری عمل میں لا کر تحقیقات بڑے پیمانے پر شروع کر دی ۔ آئی جی جموں نے 4 عسکریت پسندوں کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ان کے قبضے سے چار پاکستانی سم کارڈ برآمد کئے گئے ہیں ۔ پنجاب پولیس اور جموں پولیس نے جموں شہر کے ایک علاقے میں چھاپہ ڈال کر 4 نوجوانوں کی گرفتاری عمل میں لا کر تحقیقات بڑے پیمانے پر شروع کر دی ۔ آئی جی جموں راجیش کمار نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب اور جموں پولیس نے خالستان زندہ باد فورس اور خالستان لبریشن فورس کے عسکریت پسندوں کی گرفتاری عمل میں لا کر آنے سے باریک بینی سے پوچھ تاچھ شروع کر دی ۔ آئی جی کے مطابق مذکورہ افراد جموں میں عسکریت کو پھر سے دوبارہ منظم کرنے اور ریاست میں امن و امان کو درہم برہم کرنے کے لئے منصوبہ بندی کر رہے تھے تاہم پنجاب اور جموں پولیس کی جانب سے اطلاع موصول ہونے کے بعد چار افراد کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ۔ آئی جی جموں کے مطابق مذکورہ عسکریت پسندوں کی جانب سے ریاست میں حملے کرنے کی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے ۔ ah/jk

Archives