امن و قانون میں رخنہ ڈالنے والوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائیگا: جنرل سوبرتا

سرینگر(ثناء نیوز)کنٹرول لائن کی نگرانی پرمامور اہلکاروں کو انتہائی چوکس قرار دیتے ہوئے وادی میں مقیم بھارتی فوج کے اعلی ترین کمانڈر نے واضح کیا ہے کہ مقامی ہو یا غیر مقامی، کسی بھی جنگجو کو کسی بھی صورت میں گڑ بڑ پھیلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ سرینگر میں قائم فوج کی5ویں کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹنٹ جنرل سوبرتا ساہا نے مانسبل کا دورہ کرکے آگ کے ایک ہولناک واقعہ میں سینک اسکول کو ہوئے نقصان کا از خود جائزہ لیا۔اس موقعے پر انہوں نے نامہ نگاروں کے ساتھ گفتگو کے دوران ملی ٹینسی اور لائن آف کنٹرول کی صورتحال کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا۔انہوں نے واضح الفاظ میں کہا کہ حد متارکہ کی نگرانی پر تعینات فوجی اہلکار ہر دم چوکسی کا مظاہرہ کررہے ہیں کیونکہ سرحد پار سے بقول ان کے جنگجوؤں کی دراندازی کا خطرہ ہمیشہ رہتا ہے ۔انہوں نے کیرن سیکٹر میں ہوئی جھڑپ کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ گزشتہ چند ہفتوں سے سرحد پار سے دراندازی کی کوششوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے اور کیرن واقعہ اسی سلسلے کی ایک کڑی تھی۔تاہم لیفٹنٹ جنرل سوبرتا ساہا نے کہا کہ فوج نے مستعدی کے ساتھ ان تمام کوششوں کا ناکام بنادیا ہی۔ لیفٹنٹ جنرل ساہا کے مطابق امن و قانون میں رخنہ ڈالنے کی کوشش کرنے والے عناصر کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائیگا ۔یہ پوچھے جانے پر کہ مقامی نوجوانوں کی خاصی تعداد جنگجوؤں کی صفوں میں شامل ہورہی ہی، لیفٹنٹ جنرل ساہا نے براہ راست جواب دئے بغیر واضح کیا کہ مقامی اور غیر مقامی جنگجوؤں کا مقصد ایک ہے اور وہ یہ ہے کہ وادی میں گڑ بڑ پھیلاکر فورسز اور لوگوں کو نقصان پہنچایا جائی۔ انہوں نے مزید کہا کہ فوجی اہلکار لائن آف کنٹرول کی کڑی نگرانی کررہے ہیں اور مستقبل میں بھی جنگجوؤں کی طرف سے دراندازی کی کوششوں کو ناکام بنایا جائے گا۔ایک اور سوال کے جواب میں فوجی کمانڈر نے کہا کہ فوج عوام کی محافظ ہے اور یہ فریضہ بخوبی نبھا رہی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ فوجی افسران اور اہلکاروں کو اس بات کی واضح ہدایات دی گئی ہیں کہ جنگجو مخالف کارروائیوں کے دوران عام لوگوں کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بناکر صرف شرپسند عناصر پر توجہ مرکوز کی جائی۔سینک اسکول مانسبل کے دورے کے دوران 15ویں کور کے کمانڈر نے آگ سے متاثرہ بچوں میں ایک لاکھ0ہزار روپے کی نقد امداد واگزار کرنے کے علاوہ ٹینٹ اور بستر وغیرہ فراہم کرنے کا بھی اعلان کیا۔۔nt/ah/wa

Archives