جیلوں میں بھی محبوسین محفوظ نہیں ہیں۔: آسیہ اندرابی

سرینگر)ثناء نیوز)دختران ملت سربراہ آسیہ اندرابی اور مسلم لیگ نے کپوراہ جیل میں قیدیوں پر اخوانیوں کے ذریعہ حملہ کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے ہوئے کہا کہ جیلوں میں عسکریت پسند ، تحریک نواز لیڈران اور کارکنان کے ساتھ جیل انتظامیہ اور اخوانیوں کے ذریعہ تشدد اس بات کو ثابت کرتا ہے کہ حکومت قید میں محبوسین سے خائف ہیں اور دوران قید و بند انہیں مارنے کے درپے ہیں۔ آسیہ اندرابی نے خبرا دار کیا کہ اگر بھارت کی کسی بھی جیل میں کسی بھی جنگجو اور تحریک نواز کے ساتھ ظلم و زبردستی کے نتیجہ میں کوئی گزند پہنچتی ہے تو اس کے سخت نتائج بر آمد ہونگے ۔انہوںنے کہا کہ حملہ میں منظور احمد بٹ( حزب المجاہدین) ممتاز احمد خان ، محمد مقبول بٹ کے برادر اصغر ظہور احمد بٹ اور بارہمولہ کے عاشق قادر لون کو گہری چوٹیں آئی ہیں ۔حملہ کی وجہ سے عاشق قادر لون عرف راجا کے سر پر گہری چوٹ آئی ہے جس کی حالت ہسپتال میں تشویشناک ہے ۔ آسیہ اندرابی نے کہاکہ عاشق لون کے گھر والوں کو بھی اس سے ملنے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے جس سے اس کے گھر والوں کو عاشق کی سلامتی کے بارے میں تشویش لاحق ہوگئی ہی۔ انہوںنے کہاکہ ایسے حالات میں وہاں پر جو تحریک سے وابستہ افراد مقید ہیں انہیں اور انکے گھر والوں کو انکی سلامتی کے حوالے سے کافی خدشات ہیں ۔ادھرمسلم لیگ نے کپواڑہ جیل میں اخوانیوں کے ہاتھوں عاشق قادر لون کو زخمی کرنے پر شدید ردعمل کااظہار کیا ہی۔ ترجمان اعلی نے کہا کہ عاشق قادر لون ہسپتال میں موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا ہیں۔ انہوںنے انتظامیہ اور جیل حکام کی کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ جیل حکام کی لا پروائی کی وجہ سے آج تک درجنوں افراد ایسے ہی حملوں کے شکار ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر عاشق قادر لون کو کوئی گزند پہنچی تو اس کی تمام تر ذمہ داری جیل حکام اور انتظامیہ پر عائد ہوگی۔۔nt/ah/wa

Archives