کشمیر ایک انتہائی حساس معاملہ ہے احتیاط سے نمٹ رہے ہیں امورداخلہ کے وزیر مملکت

کشمیر ایک انتہائی حساس معاملہ ہے احتیاط سے نمٹ رہے ہیں امورداخلہ کے وزیر مملکت

حیدر آباد)ثناء نیوز)کشمیر مسئلہ کو انتہائی حساس قرار دیتے ہوئے بھارتی امورداخلہ کے وزیر مملکت کرن رجیجو نے کہا کہ بھارت تمام اقدامات قومی مفاد میں اٹھاکر اس مسئلہ کے ساتھ انتہائی احتیاط سے نمٹ رہا ہے۔ کرن رجیجو نے متنازعہ کوثر ناگ یاترا پر اٹھے تنازعے کا جائزہ لینے کے بارے میں کہا کہ اس بارے میں کسی شخص یا تنظیم کی رائے کو حتمی تصور نہیں کیا جائے گا۔مہاجر پنڈتوں کی بازآباد کاری کے پیکیج کوروبہ عمل لانے کا اعادہ کرتے ہوئے امورداخلہ کے وزیر مملکت نے پھر کہاکہ جہاں قومی مفاد کو زک پہنچنے کا اندیشہ ہوگا،وہاں مرکزی سرکار کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔ حیدر آباد میں واقع نیشنل انڈسٹریل سیکورٹی اکیڈمی کی پاسنگ آوٹ پریڈ کا معائینہ کرنے کے بعد اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کرن رجیجونے کہا کہ کشمیر ایک انتہائی حساس معاملہ ہے اور اس سے جڑے تمام معاملات کوحل کرنے کیلئے موجودہ بھارتی حکومت تمام اقدامات قومی مفاد کو مد نظر رکھ کر ہی اٹھارہی ہے ۔انہوں نے کہا میرے لئے یہ دانشمندی نہیں ہوگی کہ میں ان اقدامات کا ذکر کروں جو ہم اٹھانے کا منصوبہ بنارہے ہیں کیونکہ یہ انتہائی حساس نوعیت کا معاملہ ہے اور ہم اس کے ساتھ بڑے احتیاط کے ساتھ نمٹ رہے ہیں اور ہمیں ہر چیز کو قومی مفاد میں دیکھنا ہے۔پیرپنچال پہاڑی سلسلے پر واقع کوثرناگ تک پنڈت تنظیموں کی طرف سے یاترا کا اعلان کئے جانے کے بعد پیدا ہوئے تنازعے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے امور داخلہ کے وزیر مملکت نے بتایامرکزی وزارت داخلہ پورے معاملہ کا جائزہ لے رہی ہے ، جموں و کشمیر کے وزیر اعلی عمر عبداللہ نے اس بارے میں اپنے خیالات ظاہر کئے ،پس ہم عمر عبداللہ کے خیالات اور تمام حالات و واقعات کو ملحوظ نظر رکھ کر یاترا کے بارے میں بھی قومی مفاد کو مد نظر رکھ کر اقدامات اٹھائیں گے ۔انہوں نے کسی فرد یا کسی تنظیم کا نام لئے بغیر واضح کیا کہ مرکزی سرکار اس بات کی پابند نہیں کہ کسی شخص یا کسی تنظیم کی رائے یا منشاپر پابند رہا جائے ۔انہوں نے پھر کہا کہ کوثر ناگ یاترا اور دیگر ایسے مسائل اور معاملات کے بارے میں مودی سرکار کوئی بھی فیصلہ قومی مفاد کو مد نظر رکھ کر ہی لے گی ۔انہوں نے کہا کہ جہاں قومی مفاد کو زک پہنچنے کا اندیشہ ہوگا،وہاں مرکزی سرکار کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی ۔متنازعہ کوثر ناگ یاترا کے خلاف حریت رہنماوں کی طرف سے دی گئی ہڑتال کال کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے امورداخلہ کے وزیر مملکت کرن رجیجونے واضح کیا کہ اس یاتراسے جڑے سبھی معاملات کا مرکزی وزارت داخلہ باریک بینی سے جائزہ لے رہی ہے ۔ کرن رجیجونے واضح کیا کہ مہاجر پنڈتوں کی باز آباد کاری کے بارے میں مودی سرکار نے 500کروڑ روپے والے جس پیکیج کا اعلان کیا ہے ،ہم اس کی عمل آوری کیلئے کام کررہے ہیںتاہم میں اس وقت کشمیر کے بارے میں کسی بھی پالیسی کا خلاصہ نہیں کرسکتا ہوںکیونکہ یہ ہماری وزارت کے زیر غور ہیں۔nt/ah/wa

Archives